10 سال پرانا ریکارڈ موجود نہیں، میرا نااہل ہونا ایک چھوٹی قربانی ہو گی!

0

مئی 29, 2017
اہم ترین

اپنی رائے دیجئے

Image outcome for ‫عمران خان‬‎

اسلام آباد -پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ عمران نے کہا ہے کہ میرے پاس اپنے اثاثوں کا 15سال پرانا ریکارڈ موجود نہیں ہے، ماضی کے گوشواروں کا کئی سال پرانا ریکارڈ رکھنا مشکل ہے۔ اکاﺅنٹنٹ مخصوص عرصے کے بعد ریکارڈ محفوظ نہیں رکھتا۔ پانامہ کیس کے دوران نواز شریف نااہل ہو جاتے ہیں تو گارڈ فادر کو نااہل قرار دینے کی کوشش میں میرا نا اہل ہونا ایک چھوٹی سی قربانی ہوگی۔
نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان نے کہاہے کہ مسلم لیگ (ن) نے سیاست دانوں کی قیمتیں لگائی ہیں، وہ قیمتیں لگانے کے بعد اقتدار میں آکر بکنے والے افراد کو بھرپور انداز سے نوازتی ہے، سپریم کورٹ میں میرے خلاف دائر درخواست بے بنیاد ہے، اس درخواست میں میرا نا اہل ہونا ممکن نہیں ہے تاہم نواز شریف کو نااہل قرار دینے کے لئے میں اپنی سیاست کی قربانی دینے کے لئے بھی تیار ہوں ۔ نواز شریف نے خود اداروں کو تباہ کیا ہے لیکن جو بھی پاکستان کو آگے لے کر جانے کی خواہش رکھتاہے میں اس کی عزت کرتا ہوں، حکمران و ہ کام کررہے ہیں جو ایسٹ انڈیا کمپنی نے کئے تھے۔ن لیگ کو میرے خلاف کیس دائر کرنا اب کیوں یاد آیا؟ جب میں ان کے خلاف میدان میں آیا تو یہ بھی میرے خلاف کھڑے ہو گئے ہیں۔ کیس نواز شریف پر چل رہا رہے اور مجھے ڈرانے کیلئے کیس کیا گیا،اگر نواز شریف نا اہل ہوجائیں گے تو میرا ناہل ہونا چھوٹی قربانی ہوگی۔انہوں نے کہاکہ پاکستان جیسی خوبصورتی کہیں نہیں ہے ، میں لندن صرف اپنے بچوں کیلئے جاتا ہوں اور میں کبھی نااہل نہیں ہوسکتا کیونکہ میں نے غلطی کی ہوگی تو نااہل ہوں گا جبکہ حکمران وہ کام کررہے ہیں جوایسٹ انڈیا کمپنی نے کئے تھے ،ملک میں بد ترین لوڈ شیڈنگ کیخلاف عوام سڑکوں پر ہیں لیکن ان کا کوئی پرسان حال نہیں ہے۔

عمران خان کا مزید کہنا تھا کہ نواز شریف فرینڈلی اپوزیشن کے عادی ہیں، خورشید شاہ دونوں طرف کرکٹ کھیلتے ہیں،ان کا ڈبل شاہ کا نام بڑا اچھا ہے۔ نواز شریف سیاسی ہسٹری بن چکے ہیں ان کا دور ختم ہو چکا ہے، نواز شریف ادھر ادھر جا کر فیتے کاٹ رہے ہیں۔ نواز شریف کا وقت ختم ہو چکا اگر بچ گئے تو دھاندلی کر کے بھی الیکشن نہیں جیت سکیں گے، اس بار اپنے امپائر بھی کھڑے کرینگے تو ہرا دیں گے۔ پروگرام میں پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ نے اعتراف کیا ہے کہ بنی گالہ جائیداد کی خریداری کے لیے دو ٹرانزیکشنز کا ریکارڈ نہیں مل رہا۔ تیرہ سال پہلے جمائما نے پیسے بھیجے، 2002ءمیں میرے پاس پیسے نہیں تھے، جمائما راشد کے ذریعے پیمنٹ کرتی تھی، باقی پیمنٹس پر نام ہے صرف دو پیمنٹس کا ریکارڈ نہیں مل رہا۔ مجھ پرفارن فنڈنگ کیس میں الزام لگایا گیا ہے کہ ایک سکھ سے 500 ڈالرز کی فنڈنگ لی گئی، اس سکھ کی بیوی ایک پاکستانی تھی، وہ سکھ اپنی بیوی کیساتھ آیا اور فنڈ دیا :-



2017-05-29

Share.

About Author

Leave A Reply