کوئٹہ: پولیس پر فائرنگ، جوابی کارروائی میں 3 مبینہ دہشتگرد ہلاک

0

پولیس اور سیکیورٹی فورسز کی جوابی کارروائی کے دوران 3 مبینہ دہشت گرد مارے گئے جبکہ بڑی تعداد میں اسلحہ بھی برآمد ہوا ہے۔

کوئٹہ کے علاقے عیسی ٰنگری کے قریب پولیس اہلکاروں پر مسلح ملزمان نے فائرنگ کی ، جس کی اطلاع ملتے ہی پولیس کی بھاری نفری عیسیٰ نگری کی جانب روانہ کردی گئی ۔

سیکیورٹی ذرائع کے مطابق پولیس نے عیسی ٰنگری کےاطراف کےعلاقے کو گھیرے میں لے لیا جس کے بعد پولیس کا دہشت گردوں سے باقاعدہ مقابلہ شروع ہو گیا۔

سیکیورٹی ذرائع نے بتایا ہے کہ پولیس کی جوابی فائرنگ کے نتیجے میں ایک کے بعد ایک کرکے 3 دہشت گرد ہلاک ہوگئے، جس کے بعد پولیس اور سیکیورٹی فورسز مبینہ دہشت گردوں کےمکان میں داخل ہوگئیں۔

سیکیورٹی ذرائع نے یہ بھی بتایا ہے کہ مذکورہ مکان سے 2 کلاشنکوف، ایک پستول اور 5 کلو دھماکا خیز مواد برآمد ہوا ہے، جبکہ دہشت گردوں کے زیر استعمال ایک موٹر سائیکل بھی برآمد ہوئی ہے۔

علاوہ ازیں وزیراعلیٰ بلوچستان نواب ثناء اللہ زہری کا پولیس کی دہشت گردوں کےخلاف مذکورہ کارروائی پر اظہار اطمینان کرتے ہوئے کہنا ہے کہ دہشت گردوں کا آخری حد تک پیچھا کریں گے۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ 3 دہشت گردوں کی ہلاکت پولیس کارکردگی کا ثبوت ہے۔

یاد رہے کہ جمعرات کی سہ پہر کو کوئٹہ میں نامعلوم مسلح افراد کی فائرنگ سے سپرنٹنڈنٹ پولیس (ایس پی) قائد آباد مبارک شاہ سمیت 4 پولیس اہلکار شہید ہوگئے تھے۔

پولیس کے مطابق فائرنگ کا یہ واقعہ کوئٹہ کے علاقے کلی دیبہ میں پیش آیا جب مسلح افراد نے علاقے میں گشت کرتی پولیس موبائل پر فائرنگ کردی۔

خیال رہے کہ بلوچستان میں متعدد کالعدم گروپ اور علیحدگی پسند بلوچ تنظیمیں سیکیورٹی فورسز اور عام شہریوں کے خلاف مسلح کارروائیوں میں مصروف ہیں، ان کارروائیوں میں سیکڑوں لیویز، ایف سی اور پولیس اہلکار شہید ہوچکے ہیں۔

Share.

About Author

Leave A Reply