کشمیری پاکستان کی تکمیل کی جنگ لڑ رہے ہیں،دفاع پاکستان کونسل

0

24

کراچی : دفاع پاکستان کونسل کے زیر اہتمام کشمیر کانفرنس سے مذہبی و سیاسی و کشمیری  جماعتوں کے قائدین نے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ کشمیری پاکستان کی تکمیل کی جنگ لڑ رہے ہیں۔ پاکستان کے یوم آزادی پر کشمیریوں کو پیغام دیتے ہیں کہ پاکستانی قوم انکی تحریک میں شانہ بشانہ شریک ہے۔ وزیراعظم کو مودی کے بیانات پر خاموش نہیں رہنا چاہئے۔ بلوچستان پر بھارتی وزیراعظم کا بیان اندرونی مداخلت ہے۔ وطن عزیز میں ہونیوالی تمام تر دہشت گردی و تخریب کاری کا ذمہ داری انڈیا ہے۔ نواز شریف کشمیرکا مسئلہ عالمی سطح پر اٹھائیں۔ کشمیر صرف تقریروں سے آزاد نہیں ہو گا ۔ عملی مدد کرنے کی ضرورت ہے۔ مسئلہ کشمیر کے حوالہ سے کنفیوژن پھیلانے والے سن لیں کہ بانی پاکستان نے کشمیر کو شہہ رگ کہا ہے۔ پارلیمنٹ کا اجلاس بلا کر کشمیر پالیسی بانی پاکستان کے فرمان کے مطابق بنائی جائے۔ انڈیا سے سفارتی و تجارتی تعلقات ختم کرنے کا اعلان کیا جائے ۔ بھارت ایک دہشت گرد ملک ہے جس نے پیلٹ گن کے ذریعے کشمیریوں کی بینائی چھینی۔

25

ان خیالات کا اظہاردفاع پاکستان کونسل کے چیئرمین مولانا سمیع الحق،جماعة الدعوة پاکستان کے سربراہ پروفیسر حافظ محمد سعید،حریت کانفرنس کے مرکزی رہنما غلام محمد صفی،اہلسنت والجماعت کے سربراہ علامہ محمد احمد لدھیانوی،ملی یکجہتی کونسل کے صدر،جمعیت علماء پاکستان کے صدر ڈاکٹر صاحبزادہ ابوالخیر محمد زبیر ، عوامی مسلم لیگ کے سربراہ شیخ رشید احمد ، دفاع پاکستان کونسل کے رہنما حافظ عبدالرحمان مکی ، انصارالامة کے امیر مولانا فضل الرحمان خلیل ، جماعت اسلامی کے نائب امیر اسداللہ بھٹو ، متحدہ جمعیت اہلحدیث کے امیر سید ضیا ء اللہ شاہ بخاری، جماعت اہلحدیث کے امیر حافظ عبدالغفار روپڑی، جئے سندھ انقلابی محاذ کے رہنما غازی خان سولنگی، جماعة الدعوة کے مرکزی رہنما قاری محمد یعقوب شیخ، نائب صدر جمعیت علماء پاکستان محمد صدیق راٹھور، جماعة الدعوة کے مرکزی رہنما مولانا سیف اللہ خالد، مولانا بشیر احمد خاکی، جماعة الدعوة سندھ کے رہنما مولاناغلا م قادر سبحانی، جماعت اسلامی کراچی کے امیر حافظ نعیم الرحمان، تحریک تحفظ قبلہ اول کے چیئرمین مولانا رانا شمشاد احمد سلفی، جمعیت علماء پاکستان کراچی کے رہنما قاضی احمد نورانی، اہلنست والجماعت کراچی کے صدر ربنواز حنفی ، جمعیت علماء اسلام (س) کے رہنما مولانا احمد یار ، انصاف ورکر اتحاد سٹیل مل کے صدر یاسین جامبڑو ، اہلسنت والجماعت کراچی کے رہنما مولانا تاج محمد حنفی ، تحریک حرمت رسولﷺ کے رہنما علی عمران شاہین نے یونیورسٹی روڈ پر کشمیر کانفرنس کے ہزاروں شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

26

دفاع پاکستان کونسل کے چیئر مین مولانا سمیع الحق نے کہا کہ کراچی کے بارے غلط تاثرات پھیلی ہوئی ہیں۔ملک دشمن طاقتوں نے اپنی توقعات وابستہ کی ہوئی تھیں لیکن آج انکی امیدیں خاک میں مل گئیں۔اہلیان کراچی نے پیغام دیا کہ ہم کشمیر کے لئے سب کچھ قربان کریں گے اور پاکستان کو اسلام کا قلعہ بنائیں گے۔دفاع پاکستان ہم سب کی مشترکہ ذمہ داری ہے۔ملک کے دفاع کے لئے ہم ایک ہیں۔ہر مکتبہ فکر کے لوگ دفاع پاکستان میں شامل ہیں۔انہوں نے کہا کہ جہاد کو دہشت گردی کہ کر مسلمانوں کو بدنام کیا گیا۔حکمران امریکہ کے غلام بن چکے ہیں۔ذہنی غلامیوں سے آزادی بھی ضروری ہے۔انہوں نے کہا کہ کشمیر قربانیوں سے آزاد ہو گا۔دفاع پاکستان کونسل نے رمضان المبارک میں سخت گرمی میں بھی جلسے کئے ۔ہم ملک کا نظریاتی ،جغرافیائی اور دفاعی تحفظ کریں گے۔دفاع پاکستان کونسل کا اب سے بڑا ہدف بلوچستان ہو گا،کوئٹی میں بھی جلد بڑا پروگرام کریں گے۔

امیر جماعة الدعوة پاکستان پروفیسر حافظ محمد سعید نے کہا کہ کشمیریوں نے قیام پاکستان سے قبل ہی پاکستان کے ساتھ الحا ق کا اعلان کیا،چوہدری غلام عباس نے قرارداد منظور کی تھی لیکن،انڈیا نے زبردستی کشمیر میں فوج داخل کی اسوقت پاکستان کے پہلے گورنر جنرل قائداعظم محمد علی جناح نے کمانڈرانچیف کو حکم دیا کہ کشمیر میں فوج داخل کرو اسوقت کمانڈرانچیف نے حکم ماننے سے انکارکیا۔میں اب آج آرمی چیف جنرل راحیل شریف سے کہتا تھا کہ قائداعظم کا حکم ابھی پینڈینگ میں ہے۔کشمیر میں فوج داخل کریں۔انہوں نے کہا کہ میں جنگ کی دعوت نہیں دے ریا،اب حکمت عملی طے کرنے کا وقت ہے۔نواز شریف نے مظفر آباد میں کہا تھاکہ ہم کشمیریوں کے ساتھ ہیں،چودہ اگست کو کشمیریوں کے نام کرتے ہیں۔زخمیوں کا علاج بھی کروائیں گے لیکن مودی کے بیانات پر کیوں خاموش ہیں؟مودی نے اے پی سی میں کہا کہ کشمیر کو بھول جائو ہم بلوچستان تم سے لیں گے،مودی نے ڈھاکہ میں کہا تھا کہ بنگلہ دیش توڑنے والوں میں میں بھی شامل تھا،نواز شریف اسوقت کیوں خاموش رہے ، اب اس نے کہا کہ بلوچستان میں ہم اپنی مرضی سے فیصلہ کریں گے پاکستان بلوچوں پر ظلم کر رہا ہے، مودی کے ان بیانات پر پاکستان کا وزیراعظم کیوں خاموش ہے، انہوں نے کہا کہ کشمیر میں خون بہہ رہا ہے ، بلوچستان ، کراچی میں جوانوں کا خون بہہ رہا ہے، پاکستان میدان جنگ بنا ہوا ہے اوراس کا  ذمہ دار انڈیا ہے۔ وزیر اعظم آج چودہ اگست کو اعلان کریں کہ انڈیا سے آلو پیاز کی تجارت اورسفارتی تعلقات ختم کرتے ہیں۔کشمیر میں ایک ماہ سے کرفیونافذ ہے، امدادی سامان لے کر چکوٹھی سے سرینگر پہنچو پھر کشمیریوں کو پتہ چلے گا کہ نواز شریف ہمارے ساتھ ہے۔ انہوں نے کہا کہ ابھی تک کوئی کشمیر پالسیی نہیں،دونوں ایوانوں کا اجلاس بلایا جائے اور بانی پاکستان کے جملے پرکہ کشمیر پاکستان کی شہہ رگ ہے پر کشمیر پالیسی بنائی جائے اور پھر دنیا میں اس مسئلہ کو اٹھایا جائے۔اپنی کابینہ کو لے کر ممالک میں جا کر کشمیریوں پر ہونے والے بھارتی مظالم سے دنیا کو آگاہ کریں۔انہوں نے کہا کہ آج آسیہ اندرابی زخمی ہوئی،اب باتوں کا وقت نہیں،غذائی قلت دور کرنے کے لئے ٹرک لے کر جائیں۔اگر تم نہ گئے تو پھر ہمیں مت روکنا۔

حریت کانفرنس کے کنوینئرغلام محمد صفی نے کہا کہ قائداعظم نے پشاور میں تقریر کرتے ہوئے کہا تھا کہ ہم پاکستان کو محض زمین کے ایک ٹکڑے کے لئے حاصل نہیں کرنا چاہتے بلکہ ایک تجربہ گاہ چاہتے ہیں جس میں اسلام کو نافذ کریں گے۔میڈیا میں کنفیوژن پیدا کی جارہی ہے کہ قائداعظم کس طرح کا پاکستان چاہتے تھے اسی طرح کشمیر کے حوالہ سے بھی کنفیوژن پھیلائی جا رہی ہے۔ میں ان سے کہنا چاہتا ہون کہ جو چاہو کہو لیکن جس شخص نے انگریزوں ،ہندوئوں کی مخالفت کے باوجود پاکستان بنایا اسنے کہا کہ کشمیر پاکستان کی شہہ رگ ہے،ہندوستان کا دعویٰ اٹوٹ انگ غلط ہے۔انہوں نے کہا کہ جب تک شہہ رگ جسم سے نہیں جڑے گی انڈیا سازشیں کرتا رہے گا۔مودی نے آل پارٹیز کانفرنس میں اعلان کیا کہ پاکستان کو بلوچوں کے بارے میں جواب دینا ہو گااور کہا کہ آزادکشمیر کے لوگوں کے ساتھ رابطہ کیجئے ان کے مسائل کیا ہیں۔بھارت اگلے پندرہ اگست کو آزاد کشمیر میں ہندوستان کا جھنڈا لہرانا چاہتا ہے۔آج انسانوں کے ٹھاٹھیں مارتے سمندر میں کہتا ہوں کہ ہم کشمیری ہیں۔کشمیر پاکستانیوں کا ہے ۔کشمیری اور پاکستانی ایک دوسرے کو الگ نہیں سمجھتے۔پاکستان ایک مسجد کی مانند ہے۔

اہلسنت والجماعت کے سربراہ علامہ محمد احمد لدھیانوی نے کہا کہ ایک ہفتہ قبل کوئٹہ میں محب وطن وکلاء پر بھارتی ایجنٹوں نے دھماکاکیا جس سے ساٹھ وکلاء اور دو صحافیوں سمیت مقامی شہری بھی شہید ہوئے۔ہم ان شہدا کے غم میں شریک ہیں اور اظہار یکجہتی کرتے ہیں۔اب تقریروں کا نہیں بلکہ تقدیروں کو بدلنے کا وقت آگیا ہے۔کشمیریوں سے محبت اور یکجہتی کے اظہار کے لئے ہزاروں لوگ سڑکوں پر آ چکے ہیں۔انہوں نے کہا کہ آج بھی بھارتی فوج نے کشمیری مائوں ،بہنوں،بیٹیوں پر ظلم کیا ۔ہماری بہنیں تڑپتی رہین اور ہم صرف کشمیر بنے گا پاکستان کا نعرہ لگائیں،اس سے حق ادا نہیں ہوتا۔افغانستان میں سوویت یونین کو ٹکڑے کرنے والی قوم دفاع پاکستان کونسل کے قائدین کی کال پر لبیک کہتے ہوئے کشمیریوں کی مدد کے لئے جانا چاہتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم نے چودہ اگست کو کشمیریوں کے نام کیا ،آج وہ اعلان کرتے کہ کلبھوشن کو کوئٹہ کے چوک میں لٹکایا جائے گا۔

جمعیت علماء پاکستان کے صدر ڈاکٹر صاحبزادہ ابوالخیر محمد زبیر نے کہا کہ دفاع پاکستان کونسل نے کشمیریوں کے ساتھ یکجہتی کر کے یوم آزادی منانے کا اعلان کیا ہے۔آج پورے ملک میں آزادی کشمیر کے حوالہ سے ریلیاں نکل رہی ہیں۔کراچی کا ٹھاٹھیں مارتا سمندر یہ اعلان کر رہا ہے کہ ہم کشمیریوں کے ساتھ ہیں۔پاکستان کی آزادی اس دن مکمل ہو گی جب کشمیری آزادی کے ساتھ پاکستان کا پرچم لہرائیں گے۔سوچنے کی بات ہے کہ ہم آج تک کشمیر کو آزاد نہیں کروا سکے،بلکہ افسوس اس بات پر ہے کہ ہم نے اپنا ایک بازو بھی کٹوا دیا۔انہوں نے کہا کہ اللہ نے پاکستان کی صورت میں عظیم نعمت ہمیں عطا کی،چاہئے تو یہ تھا کہ جس مقصد کے لئے پاکستان بنایا گیا تھا اس کو پورا کیا جا تا اور اسلام کو نافذ کیا جاتا مگر ایسا نہیں کیا گیا۔ااب بھی اگر ہم چاہتے ہیں کہ پاکستان کو ترقی دیں ،کشمیر آزاد ہو تو پھر اسلام کو نافذ کرنا ہوگا۔بانی پاکستان نے کہا تھا کہ پاکستان میں قرآن و سنت کا قانون نافذ ہو گا۔اسی سے دہشت گردی ختم ہو گی۔انہوں نے کہا کہ کلبھوشن کو پکڑا گیا تو اسے سزا کیوں نہیں ملی ؟را کے ایجنٹ پاکستان میں دندناتے پھر رہے ہیں۔انکو تحفظ دینے والوں کو بھی بے نقاب کیا جائے۔

وامی مسلم لیگ کے سربراہ شیخ رشید احمد نے کہا کہ آج نوے کی دہائی کے بعد کشمیری پھر جاگے ہیں۔پاکستان میں دینی طاقتیں مولانا سمیع الحق، حافظ محمد سعید کی قیادت میں کشمیریوں کے ساتھ کھڑی ہیں لیکن حکومت انڈیا کے ساتھ آنکھوں میں آنکھیں ڈال کر بات کرنے کو تیار نہیں۔انہوں نے کہا کہ پاکستان زندگی کے اہم ترین دور سے گزر رہا ہے۔نواز شریف نے جنم دن پر مودی سے پگڑیاں بدلیں ،قوم کے اداروں کو اعتماد میں نہیں لیا گیا۔بھارتی وزیر داخلہ صرف اس لئے پاکستان آیا تھا کہ کشمیر کی تحریک عروج پر ہے اور نواز شریف ساتھ دے گا لیکن وہ بھول گیا تھا کہ افواج پاکستان نے ارادہ کر لیا ہے کہ کشمیرکے لئے جئیں گے،مریں گے۔انہوں نے کہا کہ کراچی پاکستان کا معاشی دل اور ترقی کی شاہراہ ہے۔کوئی سیاستدان ایسا نہیں آئے گا جو انڈیا کے سامنے کھل کر بات کرے گاکیونکہ ہندوستان امریکہ کے جیب کی گھڑی ہے۔انڈیا کو امریکہ کی آشیر باد حاصل ہے۔اگر آج بھی کشمیر کی آزادی کے لئے نہ بولے تو کراچی اور بلوچستان میں امن قائم نہیں ہو گا۔انڈیا نے ان ڈکلیر وار مسلط کی ہوئی ہے۔انہوں نے کہا کہ کشمیر کے لئے سیاسی و اخلاقی طور پر ساتھ دیں۔کشمیر کی جدوجہد آزادی کو میں سمجھتا ہوں۔کشمیر ی لیڈر پاکستان کی طرف دیکھ رہے ہیں۔جس طرح پاکستان کا جغرافیہ اہم ہے اسی طرح کشمیرکا جغرافیہ بھی اہم ہے۔ہمیں کشمیریوں کے ساتھ شانہ بشانہ کھڑا ہونا ہو گا تقریروں سے کشمیر آزاد نہیں ہو گا ،عملی مدد کرنی ہو گی۔انہوں نے کہا کہ پاکستان کی سب مذہبی و سیاسی جماعتیں متحد ہو جائیں۔

جماعة الدعوة کے مرکزی رہنما حافظ عبدالرحمان مکی نے کہا کہ امریکہ نے عالم اسلام کے ملکوں کو توڑا جبکہ پاکستان وہ عظیم ملک ہے جس نے روس کو شکست دی اور امریکہ و نیٹو کو بھی شکست فاش دی۔اب بھارت کی باری ہے۔پاکستان کا مطلب کیا لاالہ الااللہ کے نعرے لگوئے گئے۔انہوں نے کہا کہ دفاع پاکستان کونسل پچھلے ایک ماہ سے پر امن جدوجہد کر رہی ہے۔برہان وانی کی شہادت کے بعد کشمیریوں نے بڑے مظاہرے کئے اور پاکستان کا پرچم اٹھا کر آواز لگائی کہ کشمیر بنے گا پاکستان،وطن عزیز میں حافظ محمد سعید نے قوم کو متحد کرنے کے لئے کشمیر کارواں کا انعقاد کیا اور دنیا کو بتایا کہ پیلٹ گنوں سے بچوں کی بینائی چھینی جا رہی ہے۔زخمیوں کو ہسپتالوں میں مارا جا رہا ہے۔انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم نے کہا کہ چودہ اگست کشمیریوں کے نام ہے۔جس کا جواب بھارت نے پلوامہ میں دیا۔بھارت نے آج چودہ اگست کو برہان وانی کے گھر میں خواتین پر حملہ کیا ۔خواتین گولیاں کھا کر زخمی ہوئیں۔دختران ملت کی سربراہ آسیہ اندرابی زخمی ہے۔انہوں نے کہاکہ بھارتی فوج نے کشمیری خواتین پر گولیاں برسائیں ۔دنیا دیکھ لے دہشتگرد کون ہے؟۔انہوں نے کہا کہ پاکستا ن کے وزیراعظم نے کشمیریوں پر ہونے والے مظالم کے بعد مودی کو کیوں جواب نہیں دیا۔

انصار الامة پاکستان کے سربراہ مولانا فضل الرحمان خلیل نے کہا کہ آج چودہ اگست ہماری آزادی اور جشن کا دن ہے لیکن ہماری آزادی اور خوشیاں ادھوری ہیں۔آزادی اس وقت مکمل ہو گی جب کشمیری آزادی کے ساتھ چودہ اگست منائیں گے۔مودی نے آزادکشمیر کا دعویٰ کیا ہم کہتے ہیں کہ ممبئی ،دہلی،کلکتہ تک جائیں گے۔اگر انڈیا کی فوج کی تعداد بیس لاکھ ہے تو مقابلے میں بیس کروڑ پاکستانی نکلیں گے۔انہوں نے کہا کہ جہاد کو دہشت گردی کہا گیا اور مجاہدین کو بدنام کیا گیا۔ہم بتانا چاہتے ہیں کہ جہاد ہمارے ایمان کا حصہ ہے اور قیامت تک جاری رہے گا۔بھارتی سازشیں،فیصلے ناکام ہوں گے۔انہوں نے کہا کہ بلوچستان میں را کے نیٹ ورک کو توڑا گیا۔پاکستان ترقی کرے گا۔یہ ایٹمی قوت ہے اور معاشی سفر بھی طے کر رہا ہے۔پاکستان اسلام کے لئے بنا تھا اس میں اسلام نافذ ہو گا۔

جماعت اسلامی پاکستان کے نائب امیر اسد اللہ بھٹو نے کہا کہ پاکستان کا یوم آزادی ہے اور ہماری آنکھیں کشمیر کی طرف دیکھ رہی ہیں۔کشمیر انڈس ویلی کا حصہ رہا ہے جسے ہم پاکستان کہتے ہیں۔تاریخ میں کبھی بھی کشمیر بھارت کا حصہ نہیں رہا۔نہرو کے اقوام متحدہ میں رائے شماری والی درخواست کے مطابق کشمیر میں رائے شماری کروائی جائے اور بھارتی مظالم کو بند کروایا جائے۔پاکستانی حکمرانوں کے بیانات پر تشویش کا اظہار کرتا ہوں۔کشمیریوں کی جدودجہد تکمیل پاکستان کی جدوجہد ہے۔پاکستان کو کشمیریوں کا وکیل بن کر کردار ادا کرنا چاہئے۔حکمران بھارت سے دوستی چھوڑیں اور کشمیر کے لئے آواز بلند کریں۔بھارت کی آٹھ لاکھ فوج کشمیر سے نکالی جائے۔امریکہ یورپ مسلمان دشمنی کی پالیسی پر عمل پیرا ہیں۔اقوام متحدہ کی قراردادوں پر عمل ہونا چاہے۔بلوچستان میں دہشت گردی کشمیر سے توجہ ہٹانے کے لئے کروائی گئی۔

متحدہ جمعیت اہلحدیث کے امیر سید ضیا ء اللہ شاہ بخاری نے کہا کہ پاکستان سے محبت کرنا ملی،قومی فریضہ ہے۔ہم نظریہ پاکستان کو یاد رکھیں اسی میں پاکستان کی بقا،سلامتی وترقی ہے۔اس موقع پر انہوں نے پاکستان کا مطلب کیا لاالہ الااللہ کے نعرے لگوائے،انہوں نے کہا کہ کشمیر پاکستان کی شہہ رگ ہے۔کشمیر ی میدان میں ہیں۔قوم متحد ہے۔کشمیریوں کو آزادی مل کر رہے گی۔مودی کا بلوچستان پر بیان پاکستان کے اندرونی معاملات میں مداخلت ہے۔

جماعت اہلحدیث پاکستان کے امیر حافظ عبدالغفار روپڑی نے کہا کہ حافظ محمد سعید مودی کو لیاقت علی والا مکا دکھائیںاور کہیں کہ ہم کشمیر آزاد کر وا کے رہیں گے۔جس طرح قیام پاکستان سے قبل نعرہ تھا لے کر رہیں گے پاکستان،اسی طرح آج ہمارا نعرہ ہے لے کے رہیں گے کشمیر،۔

جئے سندھ انقلابی محاذ کے چیئرمین غازی خان سولنگی نے کہا کہ حافظ محمد سعید کی دعوت پر دفاع پاکستان کونسل کی کشمیر کانفرنس میں آیا ہوں۔پاکستان کو سندھیوں نے جنم دیا ،انگریزوں کے خلاف لڑے،بانی پاکستان قائداعظم محمد علی جناح کے ساتھ تھے ،جیلیں کاٹیں،ہندو نے سازش کے تحت افواہ پھیلائی کہ قوم پرست سندھی ہندوستان کے دوست ہیں۔میں انڈیا،امریکہ،اسرائیل پر لعنت بھیجتا ہوں۔بھائیوں کی ناراضگی کو گھر میں حل کیا جاتا ہے۔جی ایم سید نے پاکستان کے حصول کے لئے سندھ اسمبلی میں قرارداد پاس کی تھی۔انگریزوں نے سازشیں کیں اور ہندو کا ساتھ دیا۔انہوں نے کہا کہ انگریزہندو ازم کو برصغیر میں پھیلانا چاہتے تھے۔ہم حافظ سعیدکا اسلام اور پاکستان کا محافظ سمجھتے ہیں۔کسی سیاسی جماعت پر اعتبار نہیں کرتے۔تھر میں مسیحا بن کر جماعة الدعوة کے لوگ آتے ہیں۔سیاستدانوں نے ملک کو کھوکھلا کر دیا ہے۔کشمیر یوں کی جدوجہد کو سلا م پیش کرتے ہیں۔ہم بھی جانوں کا نذرانہ پیش کریں گے۔

نائب صدر جمعیت علماء پاکستان محمد صدیق راٹھور نے کہا کہ ہندو کبھی مسلمانوں کے دوست نہیں ہو سکتے۔اقوام متحدہ کی کشمیر پر قراردادوں پر عمل کیوں نہیں ہو رہا۔امت کے اتحاد کی ضرورت ہے۔جماعت اسلامی کراچی کے امیر حافظ نعیم الرحمان نے کہا کہ آج سترواں یوم آزادی ہے ،ہندو ہماری تہذیب کو مٹانا چاہتے تھے۔قائداعظم کی قیادت میں مسلمانوں نے عظیم جدوجہد کی اور پاکستان دوقومی نطریہ کی بنیاد پر حاصل کیا گیا۔انہوں نے کہا کہ کشمیری پاکستان کے ساتھ ملنا چاہتے ہیں لیکن انہیں حق سے محروم رکھا گیا ہے۔بھارت خود اقوام متحدہ میں گیا تھا اس کے باوجود آزادی نہیں دے رہا۔کشمیری سرینگر میں پاکستان کا پرچم لہرا رہے ہیں۔پیلٹ گن کی فائرنگ سے انہیں نابیان کیا جا رہا ۔ہم عزم کرتے ہیں کہ کشمیر کی آزادی سے پاکستان کی تکمیل ہو گی۔کشمیر آزاد کروائیں گے۔آم کی پیٹیاں اور ساڑھیاں بھیجنے سے کشمیر آزاد نہیں ہو سکتا۔

تحریک تحفظ قبلہ اول کے چیئرمین مولانا رانا شمشاد احمد سلفی نے کہا کہ مودی آج کشمیر کانفرنس کا منظر دیکھے ۔تمام جماعتیں کشمیر کے مسئلہ پر متحد ہیں۔یوم آزادی کے موقع پر کشمیریوں سے یکجہتی کر رہے ہیں یہ بھارت کے لئے پیغام ہے۔اہلنست والجماعت کراچی کے صدر ربنواز حنفی ،جمعیت علماء اسلام (س)کے رہنما مولانا اسفند یار ،انصاف ورکر اتحاد سٹیل مل کے صدر یاسین جامبڑو،اہلسنت والجماعت کراچی کے رہنما مولانا تاج محمد حنفی نے کہا کہ دفاع پاکستان کونسل کی کشمیر کانفرنس میں انسانوں کا ٹھاٹھیں مارتا سمندر امڈا یا ہے۔کامیابی پر جماعة الدعوة کومبارکباد دیتا ہوں۔انڈیا نے کشمیر میں فوج داخل کی پاکستان کشمیر کو شہہ رگ کہتا ہے۔پاکستان کو بھی اپنی فوج کشمیر میں داخل کرنی چاہئے۔ہم کشمیر کاز پر دفاع پاکستان کونسل کے شانہ بشانہ رہیں گے۔

Share.

About Author

Leave A Reply