کراچی: مشتبہ افراد کا رینجرز پر دستی بم حملہ، 4 اہلکار زخمی

0

واقعے کی تفصیلات بتاتے ہوئے رینجزر کے ترجمان نے کہا کہ پیرا ملٹری فورسز نے اردو بازار میں مقدس اسٹریٹ میں قائم ایک اپارٹمنٹ میں کالعدم تنظیم سے تعلق رکھنے والے دہشت گردوں کی موجودگی کی خفیہ اطلاع پر چھاپہ مارا تھا۔

ترجمان کا کہنا تھا کہ اس دوران ملزمان نے رینجرز اہلکاروں پر دو دستی بم پھینکے اور خودکار ہتھیاروں سے فائرنگ کردی، جس کے نتیجے میں 4 رینجرز اہلکار زخمی ہوگئے۔

رینجرز ترجمان نے بتایا کہ پیرا ملٹری فورسز کی جوابی کارروائی کے دوران ایک دہشت گرد گرفتار جبکہ دوسرے نے خود کو عمارت کے ایک کمرے میں بند کرلیا۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ دوسرے دہشت گردی کی گرفتاری کیلئے عمارت کو محاصرے میں لے لیا گیا ہے جبکہ وقفے وقفے سے فائرنگ کا سلسلہ بھی جاری ہے۔

پولیس حکام کا کہنا تھا کہ سیکیورٹی اہلکاروں اور ملزمان کے درمیان فائرنگ اور دستی بم حملے کے واقعے میں 4 رینجرز اہلکار، ایک دکاندار اور ایک راہ گیر بچہ زخمی ہوا ہے۔

پریڈی کے ایس ایچ او اورنگ زیب خٹک نے میڈیا کو بتایا کہ جس وقت رینجرز اہلکاروں پر حملہ ہوا وہ دہشت گردوں کی موجودگی کی اطلاع پر سرچ آپریشن کررہے تھے۔ ان کا کہنا تھا کہ واقعے میں 4 رینجرز اہلکار اور دو راہ گیر زخمی ہوئے ہیں۔

واقعے کے بعد رینجرز اور پولیس کی بھاری نفری کو علاقے میں تعینات کردیا گیا جبکہ علاقے کو گھیرے میں لے کر سرچ آپریشن کا آغاز بھی کردیا گیا۔

دوسری جانب میڈیا کی رپورٹ کے مطابق مقابلے کی جگہ پر دکانوں کو بند کرادیا گیا جبکہ عینی شاہدین نے بتایا کہ حساس اداروں نے چند مشتبہ افراد کو بھی حراست میں لیا ہے۔

رپورٹ میں ذرائع کے حوالے سے بتایا گیا ہے کہ حساس ادارے نے متعدد ملزمان کو گرفتار کرکے نامعلوم مقام پر منتقل کردیا تاہم سیکیورٹی اداروں نے صرف ایک ملزم کی گرفتاری کی تصدیق کی۔

Share.

About Author

Leave A Reply