’نواز شریف کے اثاثے 1 ارب 96 کروڑ، عمران خان کے 1 ارب 33 کروڑ‘

0

اپریل 18, 2017
اہم ترین

اپنی رائے دیجئے

2

اسلام آباد ۔ الیکشن کمیشن کے ڈائریکٹوریٹ آف پولیٹیکل فنانس نے پارلیمنٹ میں موجود سیاسی جماعتوں کے سربراہان کے 2013ء سے 2015ء کے درمیان جمع کرائے گئے اثاثوں اور گوشواروں کی تفصیلات کی پڑتال مکمل کر لی ہے جن کے مطابق وزیر اعظم نواز شریف اور تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان کے اثاثوں میں اضافہ ہوا۔ جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان اور متحدہ قومی مومنٹ کے رہنماء فاروق ستار کے اثاثوں میں کمی دیکھنے میں آئی ہے۔ روزنامہ دنیا کو دستیاب تفصیلات کے مطابق وزیر اعظم نواز شریف کے اثاثے 2013ء کے الیکشن سے پہلے ایک ارب 82 کروڑ تھے جو 2015ء میں بڑھ کر ایک ارب 96 کروڑ ہو گئے۔ عمران خان کے 2013ء میں اثاثے ایک کروڑ 40 لاکھ روپے، 2014 میں تین کروڑ 33 لاکھ اور 2015ء میں بڑھ کر ایک ارب 33 کروڑ 75 لاکھ ہو گئے۔ قومی وطن پارٹی کے سربراہ آفتاب احمد شیر پاﺅ کے 2013ء میں اثاثے 14 کروڑ 8 لاکھ تھے جو بڑھ کر 14 کروڑ 77 لاکھ ہو گئے۔ اسی طرح پختونخوا ملی عوامی پارٹی کے سربراہ محمود اچکزئی 2013ء کے انتخابات سے پہلے خالی ہاتھ آئے تھے جبکہ 2015ء میں الیکشن کمیشن میں جمع کرائی گئی تفصیلات کے مطابق ان کے اثاثے بڑھ کر 2 کروڑ 6 لاکھ تک پہنچ گئے ہیں۔ عوامی مسلم لیگ کے سربراہ شیخ رشید کے 2013ء میں اثاثوں کی مالیت 3 کروڑ 43 لاکھ روپے تھی جو 2015ء میں بڑھ کر 3 کروڑ 97 لاکھ ہو گئی۔ مولانا فضل الرحمن نے 2013ء میں اپنے اثاثے 73 لاکھ روپے ظاہر کئے اسی طرح 2015ء میں اثاثوں کی مالیت کم ہو کر 68 لاکھ ہو گئی۔ متحدہ قومی موومنٹ پاکستان کے رہنماء فاروق ستار کے پاس 2013ء میں 36 لاکھ تھے جو 2015ء میں کم ہو کر 26 لاکھ روپے ہو گئے۔ جماعت اسلامی کے امیر سراج الحق کے اثاثوں اور گوشواروں میں اضافہ نہیں ہوا۔ ذرائع کے مطابق فاروق ستار پر 29 لاکھ روپے کا قرض بھی ہے جو انہوں نے 2014ء میں لیا تھا۔ عمران خان نے گوشواروں کی تفصیلات میں 2014ء میں تین کروڑ 27 لاکھ روپے کا قرضہ ظاہر کیا جو 2015ء میں کم ہو کر چار لاکھ 61 ہزار روپے رہ گیا:۔



2017-04-18

Share.

About Author

Leave A Reply