نعرے لگانے والے طلبا کی گرفتاری پر وزیراعظم کا بڑا حکم آگیا

0

وزیر ریلوے سعد رفیق کے خطاب کے دوران نعرے لگانے پر پولیس نے طلبا کو حراست میں لیا جس کا وزیراعظم نے نوٹس لیا، اسکرین گریب/ ایکسپریس نیوز

 لاہور -پولیس نے وفاقی وزیر خواجہ سعد رفیق کی موجودگی میں حکومت مخالف اور ’’گو نواز گو‘‘ کا نعرہ لگانے پر 44 طلبا کو گرفتار کرلیا جب کہ وزیراعظم نے واقعے کا نوٹس لے لیا۔ ذرائع کے مطابق لاہور میں ریلوے کے سالانہ گیمز کی تقریب جاری تھی جس میں وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق بطور مہمان خصوصی شریک تھے، وزیر ریلوے کے تقریب سے خطاب کے دوران بعض طلبا نے حکومت مخالف اور گو نواز گو کے نعرے لگا دیئے جس پر سعد رفیق شدید برہم ہوئے اور خطاب ادھورا چھوڑ دیا جب کہ انہوں نے پولیس اور ریلوے حکام کی بھی سخت سرزنش کی۔

وفاقی وزیر کی سرزنش کے بعد پولیس نے نہتے طلبا پر دھاوا بول دیا اور کئی طلبا پر تشدد کرتے ہوئے 4 کو حراست میں لے لیا۔ تقریب میں موجود ایک طالب علم نے بتایا کہ سالانہ گیمز کی تقریب میں کراچی سمیت مختلف شہروں سے طلبا آئے ہوئے تھے جس دوران اسکول کے بچوں نے گو نواز گو کا نعرہ لگایا لیکن پولیس نے بے گناہ 4 ساتھیوں کو حراست میں لیا ہے۔ طالب علم کے مطابق وہ یہاں کھیلنے آئے تھے نہ کہ اس طرح کی حرکت کرنے، پولیس نے جن طلبا کو حراست میں لیا وہ کراچی سے آئے تھے جنہیں حراست میں لے کر نامعلوم مقام پر منتقل کیا گیا جب کہ والدین کو بھی ان کے بارے میں کچھ نہیں بتایا جارہا ہے۔

ادھر وزیراعظم نوازشریف نے لاہور میں طلبا کو حراست میں لیے جانے کی خبر میڈیا پر نشر ہونے کے بعد اس کا نوٹس لے لیا ہے۔ وزیراعظم نے حکام پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے حراست میں لیے گئے طلبا کو فوری  رہا کرنے اور اس حوالے سے کسی بھی قسم کی کارروائی سے روک دیا ہے :-

Share.

About Author

Leave A Reply