میرپور خاص کے شہری نے ججوں کو پانچ لاکھ ہرجانے کا نوٹس بھیج دیا

0

مئی 23, 2017
اہم ترین

اپنی رائے دیجئے

notice

آپ نے مختلف لوگوں کو عدالت میں ہرجانے کا کیس کرنے کا سنا ہوگا لیکن میرپورخاص کے ایک ریائشی نے سندھ ہائی کورٹ کے دو ججوں کو ہرجانے کا نوٹس بھجوا دیا گیا ہے- امان اللہ سومرو نامی شخص نے ججز پر الزام عائد کیا ہے کہ انہوں نے اس کے کیس کی شنوائی کے لیے جو تاریخ مقرر کی اس پر اس کا کیس نہیں سنا گیا جس کی وجہ سے اسے مالی اور ذہنی پریشانی ہوئی- امان اللہ سومرو نے ججز سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ اس سے اپنے اس رویے کی معافی مانگیں ورنہ پانچ لاکھ روپے ہرجانہ ادا کریں- امان اللہ سومرو نے اپنے نوٹس میں لکھا ہے کہ عوام کو نوٹس دے کر عدالت میں بلانے کے بعد بورڈ ڈسچارج کر دینا بہت بڑی زیادتی اور ظلم ہے اور ساتھ ہی یہ توہین عدالت بھی ہے- انہوں نے لکھا کہ ہم عوام نہ تو عدالت کے ملازم ہیں اور نہ ہی ہمیں عدالت میں آنے کا کوئی ٹی اے ، ڈی اے ملتا ہے اور نہ ہم ججوں کے ملازم ہیں بلکہ جج ہم عوام کے ملازم ہیں کیونکہ ان کو جو تنخواہ ملتی ہے وہ عوام کے ادا کردہ ٹیکس سے دی جاتی ہے-بورڈ ڈسچارج کرنے کی وجہ سے عدالت میں جو ہڑبونگ مچتی ہے ایسے لگتا ہے جیسے یہ عدالت نہیں سٹاک ایکسچینج ہے جہاں ہر کوئی اپنے مفاد میں زور زور سے بول رہا ہو- براہ مہربانی عدالت کو کاز لسٹ کے مطابق اور سیریل نمبر کے تحت چلایا جائے-امان اللہ سومروکا دونوں ججوں کو دیا جانے والا نوٹس نیچے ملاحظہ کیا جاسکتا ہے-



2017-05-23

Share.

About Author

Leave A Reply