مساجد میں شادی کی تقاریب کا رواج اچھی بات ہے لیکن۔۔۔

0

اگست 25, 2016
اہم ترین

اپنی رائے دیجئے

shadi

حیدر آباد: شہر بھر میں شادیوں کی تقاریب میں فضول خرچی کا معاملہ کنٹرول سے باہر نظر آتا ہے۔ حال ہی میں شادی کا ایک نیا رواج جو تیزی سے پروان چڑھ رہا ہے اور قابل تعریف ہے وہ مسجد میں نکاح کی تقریب ہے۔ یہ ایک اچھا طریقہ ہے۔ لیکن مسجد میں نکاح کے بعد شادی ہالوں میں جو گانے بجانے دیکھنے میں آتے ہیں یہ ایک اچھا طرز عمل نہیں کہا جا سکتا۔ رات گئے ہونے والے شادی کے معاملات زیادہ قابل توجہ مسئلہ بن چکے ہیں۔ ساوتھ زون پولیس ڈیپارٹمنٹ میں ہونے والی میٹنگ میں شادی ہال مالکان کو ایک بجے سے قبل ہال بند کرنے کا مشورہ دیا گیا تھا۔لیکن یہ معاملہ بھی جلد ہی دب گیا ہے ۔ شادی تقاریب میں کروڑوں روپے خرچ کیے جاتے ہیں جو عنقریب مسلم معاشرے کی تباہی کا سبب بن سکتا ہے۔ پولیس ڈیپارٹمنٹ ویسے تو لیٹ نائٹ فنکشن کے خلاف ہیں لیکن ایک ہی میٹنگ کے بعد اس ڈیپارٹمنٹ کو خاموش کر دیا گیا۔ ایسے حالات میں علما کی یہ ذمہ داری بنتی ہے کہ وہ ایسے سوشل ایونٹس کو روکنے میں اپنا کردار ادا کریں۔

source:http://www.siasat.com/



2016-08-25

Share.

About Author

Leave A Reply