سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی جعلی نقشوں کا کاروبار عروج پر پہنچ گیا

0

ستمبر 22, 2017
کراچی

اپنی رائے دیجئے

یوٹیلٹی سروسز حاصل کرنے کیلئے بلڈر نما ٹھیکیداروں نے جعلی نقشوں کے حصول کیلئے من مانے نذرانے دینا شروع کردیئے
ڈی جی اور ٹائونز میں تعینات افسران صورتحال کا علم ہونے کے باوجود خاموش،قومی خزانے کو کروڑوں کا نقصان ہورہا ہے
کراچی(وقا ئع نگار خصوصی)سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی میںجعلی نقشوں کا کاروبار عروج پر پہنچ گیا،حکومتی خزانے کو کروڑوں روپے کا ٹیکا لگادیا گیا، یوٹیلٹی سروسز حاصل کرنے کیلئے بلڈر نماٹھیکیدار مافیا نے جعلی نقشوں کے حصول کیلئے من مانے نذرانے دینے شروع کردیئے،شہر بھر میں رہائشی پلاٹوں پر جاری غیر قانونی تعمیرات کے جعلی نقشے جمع کراکر بجلی،گیس اور پانی کے کنکشن حاصل کر لئے گئے،ڈائریکٹر جنرل ایس بی سی اے سمیت ٹائونز میں تعینات افسران تمام صورتحال کا علم ہونے کے باوجود پراسرار طور پر خاموش،شہر کا انفراسٹرکچر تباہی سے دوچار ہوکر رہ گیا۔تفصیلات کے مطابق سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی کے افسران کی مبینہ ملی بھگت سے ادارے میں جعلی نقشوں کی فراہمی کا کاروبار عروج پر پہنچا ہوا ہے ،ذرائع کا کہنا ہے کہ شہر بھر میں رہائشی پلاٹوں پر گرائونڈ پلس ٹو سے فائیو تک کی جاری غیر قانونی فلیٹ ٹائپ تعمیرات کرنے والی ٹھیکیدارمافیا نے ایس بی سی اے میں جعلی نقشے بنانے والی مافیا کو بھاری نذرانے دیکر یوٹیلٹی سروسز حاصل کر لی ہیں،ذرائع نے انکشاف کیا ہے کہ شہر میں ہزاروں کی تعداد میں جعلی نقشوں کے ذریعے گیس وبجلی کے میٹرز جاری کئے گئے ہیں،لیاقت آباد میں 90گز کے پلاٹوں پر گرائونڈ پلس فائیو تک تعمیرات کی جارہی ہیں جن میں بھی انہی جعلی نقشوں کے ذریعے یوٹیلٹی سروسز فراہم کی گئی ہیں،ذرائع کا کہنا ہے کہ ان جعلی نقشوں کا کوئی ریکارڈ ایس بی سی اے کے پاس موجود نہیں ہے تاہم ایس بی سی اے کی مہریں اور افسران کے دستخط موجود ہیں جس کے حوالے سے ذرائع کا کہنا ہے کہ مذکورہ جعلی دستخطوں سے ٹھیکیدار مافیا یوٹیلٹی سروسز حاصل کر رہی ہیں جس سے ایک جانب حکومتی خزانے کو کروڑوں روپے کا نقصان اٹھانا پڑ رہا ہے تو دوسری طرف شہر کا انفراسٹرکچر تباہی کے دہانے پر پہنچ چکا ہے،شہری حلقوں نے موجودہ صورتحال میں کے الیکٹرک ،سوئی گیس اور واٹر بورڈ میں کنکشن کے حصول کیلئے جمع کرائے گئے نقشوں کی تحقیقات کا مطالبہ کیا ہے۔



2017-09-22

Share.

About Author

Leave A Reply