دلوں پر راج کرنے والے امام کعبہ کی وہ باتیں جو آپ میں ان سے ملاقات کا تجسس بڑھائیں!

0

لاہور-مسلم امہ اور پاکستانیوں کے دل حرمین شریفین کے نام پر دھڑکتے ہیں،اور ہر مسلمان کی خواہش ہے کہ اللہ انہیں حرمین کی زیارت نصیب فرمائے جبکہ آئمہ حرمین کی دل سوز تلاوت بھی مسلمانوں کے قلب و جگر کو گرمانے اور تڑپانے میں بنیادی کردار ادا کرتی ہے۔ سعودی عرب کے آئمہ حرمین میں سے کوئی بھی جب پاکستانی سرزمین پر تشریف لاتا ہے تو پاکستانیوں کے چہرے خوشی سے کھل اٹھتے ہیں، پاکستان تشریف لانے والے امام کعبہ الشیخ صالح بن محمد ابراہیم آل طالب اپنی دل سوز آواز سے دنیا بھر میں معروف اور مشہور برطانوی آکسفورڈ  یونیورسٹی سے فارغ التحصیل ہیں  جبکہ امریکی  شہر واشنگٹن میں سے بھی انہوں نے ایک عالمی ادارے سے قانون کی تعلیم اور سرٹیفکیٹ حاصل کیا  ، جبکہ وہ تین برس تک سعودی سپریم کورٹ میں بھی جج کے فرائض سرانجام دے چکے ہیں۔

جمعیت علمائے اسلام (ف)کا صد سالہ اجتماع کل(جمعۃ المبارک)سے نوشہرہ کے علاقے اضاخیل میں شروع ہو رہا ہے، جس میں دنیا بھر سے مسلم امہ کی اہم شخصیات تشریف لا رہی ہیں، جن میں خصوصی طور پر امام کعبہ الشیخ صالح بن محمد ابراہیم آل طالب اور سعودی وزیر مذہبی امور الشیخ صالح بن عبد العزیز آل شیخ ،بحرین کے سپیکر ،بھارت سے مولانا محمود احمد مدنی ،بنگلہ دیش سے مفتی مسعود الکریم،مولانا عبید اللہ فاروق اور مولانا عبد الرب سمیت دیگر اسلامی ممالک کے اہم زعماء صد سالہ اجتماع میں شریک ہوں گے۔

پاکستان میں امام کعبہ الشیخ عبد الرحمن السدیس کے بارے میں بچے بچے کو علم ہے ،جمعیت علمائے اسلام کے صد سالہ اجتماع میں شرکت کے لئے میڈیا میں بھی یہی خبریں مشہور تھیں کہ الشیخ ڈاکٹر عبد الرحمن السدیس ہی پاکستان تشریف لائیں گے لیکن چند روز قبل ہی روزنامہ ’’پاکستان‘‘ اپنے قارئین کو اس بارے میں خبر دے چکا ہے کہ جمعیت کے صد سالہ اجتماع میں عبد الرحمن السدیس اپنی ناسازی ء طبیعت کی بنا پر پاکستان تشریف نہیں لائیں گے ،ان کی جگہ امام کعبہ الشیخ صالح بن محمد ابراہیم آل طالب اضاخیل اجتماع اور لاہور میں مختلف پروگراموں میں شرکت کریں گے ۔اب جبکہ امام کعبہ الشیخ صالح بن محمد ابراہیم آل طالب سعودی وفد کے ہمراہ پاکستان پہنچ چکے ہیں روزنامہ ’’پاکستان ‘‘ ایک بار پھر سب سے پہلے ان کے بارے میں کچھ ایسی باتیں منظر عام پر لا رہا ہے جن کی بابت بہت سے پاکستانی لاعلم ہیں ،گو کہ امام کعبہ الشیخ صالح بن محمد ابراہیم آل طالب،ڈاکٹر عبد الرحمن السدیس کی طرح پاکستانیوں میں بہت مشہور نہیں ہیں اور عمر میں بھی ان سے چھوٹے ہیں لیکن الشیخ صالح بن محمد ابراہیم آل طالب مفتی اعظم سعودی عرب الشیخ ابن بازؒ کے براہ راست شاگرد ہیں اور سبع عشرہ قاری ہیں، شیخ صالح اپنی سریلی آواز میں قرآن کریم کی تلاوت کی وجہ سے سارے عالم میں مشہور و معروف ہیں، ان کا انداز تلاوت بہت ہی سادہ مگر پر کیف ہے۔

30 جولائی 1974 ء کو پیدا ہونے والے شیخ صالح بن محمد ابراہیم آل طالب مسجد حرام میں امامت و خطابت کے ساتھ مکہ مکرمہ کے قاضی بھی ہیں جبکہ 3 برس تک وہ سعودی سپریم کورٹ میں بھی قاضی کے فرائض سر انجام دیتے رہے ہیں۔

ان کا تعلق مشہور زمانہ سخی حاتم طائیؒ کے خاندان بنو طی سے ہے،الشیخ صالح بن محمد ابراہیم آل طالب کا خاندان علماء ، حفاظ اور قضا کی وجہ سے پورے خطہ عرب میں جانا جاتا ہے۔الشیخ صالح بن محمد ابراہیم آل طالب ائمہ حرمین میں سے وہ  واحد امام ہیں جو برطانیہ کی مشہور زمانہ آکسفورڈ یونیورسٹی سے فارغ التحصیل ہیں، آکسفورڈ میں سے انہوں نے بین الاقوامی قوانین کی تعلیم حاصل کی ہے۔پاکستان تشریف لانے والے امام کعبہ الشیخ صالح بن محمد آل طالب سعودی عرب میں تمباکو نوشی کے خلاف قائم تنظیم کے بھی رئیس ہیں جبکہ اس کے علاوہ بھی وہ سعودی عرب اور بیرون ملک کئی جامعات اور اداروں کے سربراہ یا رکن ہیں۔امام کعبہ الشیخ صالح اب تک امریکہ، ہالینڈ، مصر، مراکش سمیت مختلف ممالک میں بڑے بڑے پروگرامات میں شرکت کرچکے ہیں۔

یاد رہے کہ امام کعبہ الشیخ صالح بن محمد آل طالب کل جمعۃ المبارک کا خطبہ اضاخیل میں دیں گے اور لاکھوں فرزندان توحید ان کی اقتدا میں جمعہ کی نماز ادا کریں گے ۔امام کعبہ 9اپریل کو لاہور بھی تشریف لائیں گے جہاں وہ پاکستان علماء کونسل کے چیئرمین علامہ طاہر محمود اشرفی اور مرکزی جمعیت اہل حدیث کے سربراہ سینیٹر ساجد میر کی طرف سے دی جانے والی استقبالیہ تقریبات میں مہمان خصوصی کے طور پر شرکت کریں گے جبکہ امام کعبہ روی روڈ میں ’’اہل حدیث علماء کنونشن ‘‘ سے بھی خصوصی خطاب کریں گے :-

Share.

About Author

Leave A Reply