حافظ سعید کون سے انڈے دیتا ہے کہ ہم اسے پالتے پھریں: رانا افضل

0

hafiz-saeed پارلیمنٹ میں حزب اقتدار اور حزب اختلاف نے متفقہ طور پر ملک میں سرگرم غیر ریاستی عناصر کے خلاف سخت پالیسی اپنانے کا مطالبہ کیا ہے۔ کشمیر کے مسئلہ پر پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس میں جاری بحث کے دوران غیر ریاستی عناصر سے چھٹکارا حاصل کرنے کی بازگشت سنی گئی۔

قومی اسمبلی کی خارجہ امور کے بارے میں قائمہ کمیٹی میں حکمران پاکستان مسلم لیگ کے رکن پارلیمان رانا محمد افضل نے حافظ سعید کا نام لے کر کہا ‘حافظ سعید کون سے انڈے دیتا ہے کہ جن کی وجہ سے ہم نے اسے پال رکھا ہے۔’ انھوں نے مزید کہا کہ ‘ملک کی خارجہ پالیسی کا یہ حال ہے کہ ہم آج تک حافظ سعید کو ختم نہیں کرسکے۔ کسی بھی ملک میں جائیں تو وہاں کے رہنما کہتے ہیں کہ حافظ سعید کی وجہ سے پاکستان اور بھارت کے درمیان تعلقات خراب ہیں۔

رانا افضل نے کہا کہ ‘حافظ سعید ایسی شخصیت ہے جو دنیا میں تو دندناتی پھر رہی ہے جبکہ پاکستان میں وہ کہیں نظر نہیں آتی۔ ایسی رکاوٹوں کو دور کرنے کی ضرورت ہے جس کی وجہ سے دنیا ہمیں تنہا کر کے شدت پسند ملک قرار دینے کی کوشش کرتی ہے۔’

سینیٹ میں قائد حزب اختلاف اعتزاز احسن نے مشترکہ اجلاس میں اپنے روایتی جارحانہ انداز میں تقریر کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان آج بین الاقوامی سطح پر تنہائی کا شکار ہے کیونکہ یہاں غیر ریاستی عناصر آزاد پھرتے ہیں۔ بڑی تعداد میں غیر ریاستی عناصر کی پاکستان میں موجودگی کی وجہ سے عالمی برادری کی انگلیاں پاکستان پر اُٹھتی ہیں۔ اُنھوں نے حکومت کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ ان غیر ریاستی عناصر کے خلاف کارروائی نہیں کی گئی حالانکہ شدت پسندی کے خلاف نیشنل ایکشن پلان میں واضح طور پر کہا گیا ہے کہ ان عناصر کے خلاف سخت کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔

خیال رہے کہ رانا محمد افضل اُس وفد میں شامل تھے جس نے انڈیا کے زیر انتظام کشمیر میں انسانی حقوق کی بگڑتی ہوئی صورت حال اور پاکستان اور انڈیا کے درمیان کشیدہ صورت حال کے بارے میں فرانس کی حکومت کو آگاہ کرنے کے لیے پیرس کا دورہ کیا تھا۔

Comments

FB Login Required – comments

Share.

About Author

Leave A Reply