تاجروں کا ریگولیٹری ڈیوٹی کیخلاف چیف جسٹس سے ازخود نوٹس کا مطالبہ

0

یکطرفہ اقدام سے کاروبار بند،گرانی کاخدشہ،مہنگائی کا سونامی امڈ آئے گا، تاجر۔ فوٹو: فائل

یکطرفہ اقدام سے کاروبار بند،گرانی کاخدشہ،مہنگائی کا سونامی امڈ آئے گا، تاجر۔ فوٹو: فائل

 کراچی: روزمرہ استعمال کی درآمدی مصنوعات فروخت کرنے والے تاجروں نے چیف جسٹس آف پاکستان سے ریگولیٹری ڈیوٹی کے خلاف ازخود نوٹس لینے کا مطالبہ کردیا ہے۔

چیف جسٹس آف پاکستان سے ریگولیٹری ڈیوٹی کے خلاف ازخود نوٹس لینے کا مطالبہ آل سٹیشن تاجراتحاد ایسوسی ایشن کے صدر شرجیل گوپلانی نے درجن بھر درآمدی مصنوعات فروخت کرنے والے تاجروں کے ہمراہ کراچی پریس کلب میں پریس کانفرنس سے خطاب کے دوران کیا۔ انہوں نے حکومت پر واضح کیا کہ اگر روزمرہ استعمال کی درآمدی مصنوعات پر عائد کردی ریگولیٹری ڈیوٹی ختم نہ کی گئی تو ملک بھر کی مارکیٹوں کے احتجاج اور شٹرڈاؤن ہڑتال سے گریز نہیں کریں گے۔

شرجیل گوپلانی نے کہا کہ پالیسی سازوں کی انہی غلط پالیسیوں کی وجہ سے ملکی معیشت پر منفی نتائج مرتب ہورہے ہیں جبکہ پڑوسی ممالک بنگلہ دیش اور بھارت کی معیشت تیزرفتاری افزائش پارہی ہیں۔ انہوں نے آرمی چیف سے بھی مطالبہ کیا کہ وہ حکومت کے اس غیر دانشمندانہ اقدامات کا نوٹس لیتے ہوئے مداخلت کریں کیونکہ اس یکطرفہ اقدام سے ملک کے لاکھوں تاجروں کا ناصرف کاروبار بند ہونے کاخدشہ ہے بلکہ اس منی بجٹ سے مہنگائی کا سونامی امڈ آئے گا، ریگولیٹری کے نفاذ سے اشیا کی اسمگلنگ بڑھ جائیگی اور حکومتی ریونیو وصولیوں کا حجم بھی گھٹ جائے گا۔

صدر شرجیل گوپلانی نے بتایا کہ فی الوقت امریکی ڈالر107 روپے تجاوزکرچکا ہے اور حکومت اپنی منظم حکمت عملی کے ذریعے ڈالر کی قدرکو130 روپے تک پہنچانے کی کوششیں کر رہی ہے۔

Share.

About Author

Leave A Reply