بھارت: کشمیر میں فائرنگ سے سیاسی رہنما ہلاک

0

رپورٹ کے مطابق عبدالغنی ڈار پی ڈی پی کے پلوامہ یونٹ کے صدر تھے اور انہیں پنگلانہ کے علاقے میں فائرنگ کا نشانہ بنایا گیا۔

فائرنگ کے بعد انہیں فائرنگ کے مقام سے 31 کلو میٹر دور سری نگر کے ہسپتال منتقل کیا گیا تاہم وہ دم توڑ گئے۔

بھارتی میڈیا کی رپورٹ کے مطابق عبدالغنی ڈار پیشے کے اعتبار سے وکیل تھے اور انہیں قریب سے سینے پر تین گولیاں ماری گئیں۔

رپورٹ کے مطابق جس وقت ان پر حملہ کیا گیا اس وقت ان کے ہمراہ پولیس کی دو گاڑیاں بھی تھیں جبکہ یہ گزشتہ چند ہفتوں میں سیاستدانوں پر ہونے والا تیسرا حملہ تھا۔

دوسری جانب سری نگر میں ایک بار پھر طالب علموں نے بھارتی تسلط کے خلاف احتجاج کیا جس پر بھارتی فورسز نے ان پر فائرنگ کردی۔

امریکی خبر رساں ایجنسی ایسوسی ایٹڈ پریس کے مطابق سری نگر میں انتظامیہ نے ایک ہفتے تک جاری رہنے والی کشیدگی کے بعد دوبارہ اسکولز اور کالجز کھولے تو طالب علموں نے مظاہرہ شروع کردیا۔

پولیس نے مظاہرین کو روکنے کے لیے آنسو گیس اور آبی توپوں کا بھی استعمال کیا جس کے نتیجے میں متعدد طالب علم زخمی بھی ہوئے۔

طالب علموں نے بھی پولیس اور نیم فوجی اہلکاروں پر پتھراؤ کیا۔

یاد رہے کہ 15 اپریل کو بھارتی فورسز پلوامہ میں واقع ایک چھاپہ مارا تھا تاکہ بھارت مخالف کارکنوں کو خوف زدہ کیا جاسکے تاہم طالب علموں نے اس کے خلاف شدید احتجاج کیا تھا اور انتظامیہ کو اسکول و کالجز بند کرنے پڑے تھے۔

Share.

About Author

Leave A Reply