امریکہ میں گوریلے کو ہلاک کیے جانے کی تحقیقات

0

امریکی شہر سنسناٹی کی پولیس چڑیا گھر میں چار سالہ بچے کو بچانے کے لیے ایک گوریلے کو ہلاک کیے جانے کی تحقیقات کی کر رہی ہے۔

پولیس ان حالاتِ و واقعات کا جائزے لے رہی ہے جن میں گوریلا کے لیے بنائے کے احاطے میں چار سالہ بچے کے گرنے کے بعد اسے گوریلا کے ہاتھوں سے آزاد کروانے کے لے گولی مار دی گئی۔

پراسکیوٹر کا کہنا ہے کہ تحقیقات کے بعد فیصلہ کیا جائے گا کے اس ہلاکت کے لیے مجرمانہ دفعات کے تحت کارروائی کی جائے یا نہیں۔

چڑیا گھر کا کہنا ہے کہ اس کے پاس گوریلے کو مارنے کے سوا کوئی چارہ نہیں تھا اور اس کے گوریلے کے احاطے کے گرد اپنے حفاظتی انتظامات کا بھی دفاع کیا۔

جانوروں کے حقوق کے لیے کام کرنے والوں نے چڑیا گھر پر لاپرواہی کا الزام عائد کیا ہے۔

بچے کو معمولی زخم آئے ہیں اور اس کے والدین پر بھی سماجی رابطے کی سائٹس پر کڑی تنقید کی جا رہی ہے۔

بچہ سنیچر کو ایک رکاوٹ پر چڑھتے ہوئے گوریلا کے احاطے کی خندق میں گر گیا تھا جہاں گوریلا نے اسے پکڑ لیا اور گھسیٹ کر لے گیا۔

حکام نے کہا کہ انھوں نے 180 کلوگرام کے گوریلا کو اس وقت گولی مار دی جب ’حالات قابو سے باہر ہو گئے اور بچے کی جان کو خطرہ لاحق ہو گیا۔‘

Image copyright

Image caption

نر گوریلا ہرامبے ٹیکسس میں پیدا ہوا تھا اور اسے سنہ 2014 میں سنسناٹی منتقل کیا گیا تھا

گذشتہ ہفتے چلی کے چڑیا گھر میں دو شیروں کو اس وقت گولی مار کر ہلاک کر دیا جب ایک شخص ان کے جنگلے میں بظاہر خودکشی کی نیت سے داخل ہو گیا تھا۔

سنیچر کو ہونے والے واقعے کے بعد سنسناٹی کے چڑیا گھر میں گوریلا والے حصے کو نمائش کے لیے بند کر دیا گیا ہے۔

بچہ تقریباً دس فٹ کے گڑھے میں گر گیا تھا اور ویڈیو میں بچے کو اس گڑھے سے کھینچ کر لے جائے جانے کے مناظر دیکھے جا سکتے ہیں۔ اس کے بعد گوریلا ٹھہرتا ہے اور بچے کی جانب دیکھتا ہے۔

Image copyright
Edwin Giesbers NPL

Image caption

سنسناٹی کے چڑیا گھر میں ہرامبے کی نسل کے سب سے زیادہ گوریلے ہیں

لیکن یہ کہا گیا ہے کہ 17 سالہ گوریلے ’ہرامبی‘ نے بچے کو تقریباً دس منٹ تک کھینچا ہے۔

چڑیا گھر کے ڈائریکٹر نے کہا: ’حکام کو ایک مشکل فیصلہ کرنا پڑا لیکن انھوں نے درست فیصلہ کیا اور بچے کی جان بچائی۔ نہیں تو بہت برا ہو سکتا تھا۔‘

انھوں نے کہا کہ بے ہوشی کے انجکشن سے کام نہیں چلتا کیونکہ اس کا اثر جلدی نہیں ہوتا۔

انھوں نے کہا کہ بچے پر حملہ نہیں کیا گیا تھا لیکن ’وہ یقینی طور پر خطرے میں تھا۔‘

انھوں نے کہا کہ اس احاطے میں دو مادہ گوریلائیں بھی تھیں لیکن وہ بچے کے پاس نہیں آئیں۔

نر گوریلا ہرامبی ٹیکسس میں پیدا ہوا تھا اور اسے سنہ 2014 میں سنسناٹی منتقل کیا گیا تھا جہاں اسے افزائش نسل کے پروگرام کے تحت لایا گیا تھا۔

Share.

About Author

Leave A Reply