اسلام پوری انسانیت کےلئے امن کاضامن ہے،منارٹی ڈے پرسراج الحق کا خطاب

0

8-siraj

کراچی  : امیرجماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ پوری انسانیت اللہ کا کنبہ ہے اور اسلام ہی پوری انسانیت کے لیے امن و سکون اور عدل و انصاف کا ضامن ہے ، ایک حقیقی اسلامی حکومت میں ہی تمام اقلیتوں کو مکمل تحفظ اور حقوق مل سکتے ہیں ،جماعت اسلامی نے خیبر پختون خواہ اسمبلی میں تجویز دی تھی کہ اقلیتی برادری کو اقلیت کے بجائے پاکستانی برادری ہی کہا جائے ،جماعت اسلامی اقلیتی برادری کے تمام مسائل کے حل اور حقوق کے لیے سینٹ اور قومی اسمبلی میں آواز اٹھائے گی ان کا حق دلوائے گی ،جو پاکستان کا دشمن ہے وہ یہاں کی مسیحی ،سکھ اور ہندو برادری کا بھی دشمن ہے ،جماعت اسلامی ملک کو ایک اسلامی اور فلاحی ریاست بنانا چاہتی ہے جہاں ہر شہری کو مساوی حقوق روزگار ملیں ۔ غریب کا بیٹا کوڑے کے ڈھیر سے اپنا رزق تلاش کرنے پر مجبور نہ ہو۔ملک کے اندر کرپٹ اشرافیہ کی حکمرانی اور بد اعمالیوں کی وجہ سے ملک کے اندر تقسیم پیدا ہوگئی ہے اور ملک کا بچہ بچہ آئی ایم ایف اور ورلڈ بنک کا مقروض ہے ۔

ان خیالات کا اظہا رانہوں نے ورلڈ منارٹی ڈے کے موقع پر ادار ہ نور حق میں جماعت اسلامی کراچی منارٹی ونگ کے تحت اقلیتی معززین ہندو،سکھ اور مسیحی برادری کے اعزاز میں استقبالیہ و عشائیہ سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ استقبالیہ سے نائب امیر جماعت اسلامی پاکستان اسد اللہ بھٹو ، امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن ، نائب امیر کراچی و نگراں منارٹی ونگ مسلم پرویز پاکستان ہندو کونسل کے صدر آسر مل منگلانی ،جماعت اسلامی کراچی منارٹی ونگ کے صدر یونس سوہن ایڈوکیٹ، سری گرونانک سک سنگھ سبھا کے رہنما سردار ہیرا سنگھ ، جماعت اسلامی کراچی منارٹی ونگ کے سکریٹری پرویز برکت ، سیموئیل نذیر اور دیگر نے بھی خطاب کیا ، پادری رفاقت اور وکٹر ایموئیل نے دعائیہ کلمات ادا کیے ۔استقبالیہ میں اقلیتی برادری کی بڑی تعداد میں شرکت کی جن میں خواتین اور بچے بھی شامل تھے۔

امیر جماعت اسلامی سینیٹر سراج الحق نے خطاب کرتے ہوئے مزید کہا کہ ہم انسانیت کو اللہ تعالیٰ کاکنبہ سمجھتے ہیں اور اس پر ظلم کرنا اللہ کی نافرمانی ہے اور اس کے عذاب کو دعوت دینے کے مترادف ہے ۔ ہم تمام نبیوں پر ایمان رکھتے ہیں ۔ اسلام پوری انسانیت کو جوڑنے کا نام ہے اسلام پوری انسانیت کے لیے حقیقی طور پر امن و سکون اور چین ہے ۔زمین پر رہنے والوں پر رحم کرنا اللہ تعالیٰ کے رسول کا حکم اور فرمان ہے اور اسلام رحم دلی پر یقین رکھتا ہے ۔ میں نے خیبر پختونخواہ اسمبلی کے اندر تجویز پیش کی تھی کہ اقلیتی برادری کو پاکستانی برادری کہا جائے تاکہ ان کو الگ ہونے کا احساس نہ ہو ۔

انہوں نے کہا کہ جو پاکستان کا دشمن ہے وہ یہاں کی مسیحی ،سکھ اور ہندو برادری کا دشمن ہے ۔انہوں نے کہا کہ اسلام کے اندر وسعت نظری بہت ہے اور نبی کریمﷺ کے دور میں اور خلفائے راشدین کے دور میں اس کی مثالیں ملتی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اسلام اللہ کا دین ہے اس کے اندر انصاف ہے اور اسلامی حکومت کے اندر غیر مسلموں کے ساتھ کسی صورت میں ظلم و ناانصافی نہیں ہوسکتی ۔اسلامی حکومت میں مسلم حکمران رات کو اٹھ کر اپنی رعایا کے مسائل دیکھتا ہے ۔

سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ آج عوام پریشان ہیں اور مسائل اور مشکلات کا شکار ہیں ۔انہوں نے کہا کہ کوئی ہندو ، سکھ اور عیسائی اگر اپنے ساتھ زیادتی محسوس کرے تو وہ ملک چھوڑ کر نہ جائے بلکہ جماعت اسلامی کے پاس آئیں ۔ انہوں نے کہا کہ جماعت اسلامی ہر اقلیت کو تحفظ اور ان کے حقوق دلائے گی اور ان کے لیے آواز اٹھائے گی ۔انہوں نے کہا کہ پاکستان کسی جاگیردار نے نہیں بنایا بلکہ عوام نے بنایا ہے اور قائد اعظم نے جیسا ماڈل ملک بنانے کی کوشش کی تھی ہم ملک کوایسی ماڈل ریاست بنانا چاہتے ہیں ۔

انہوں نے کہا کہ جماعت اسلامی اقلیتی برادری کے تمام مسائل کے حل اور حقوق کے لیے سینٹ اور قومی اسمبلی میں آواز اٹھائے گی ان کا حق دلوائے گی۔ انہوںنے کہا کہ یہاں اقلیتی عوام ہی نہیں اکثریت بھی مسائل کا شکار ہیں ۔عوام صرف ووٹ دیتے ہیں لیکن عوام کے ووٹوں سے حکمران بننے والے عوام کو بھول جاتے ہیں اور عوام کی دولت اور قومی خزانے کو لوٹ کر پیشہ باہر بھیجتے ہیں ۔پانامہ ،دبئی اور دیگر ممالک میں کاروبار کرتے ہیں اور جائیدادیدں بناتے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ کوئٹہ کے سانحے میں کس کا ہاتھ ہے آج بھی لوگ مختلف رائے کا اظہار کرتے ہیں ہم سمجھتے ہیں کہ حکومت اور قومی اداروں کی ذمہ داری ہے کہ سانحہ کوئٹہ میں ملوث عناصر کو عوام کے سامنے بے نقاب کیا جائے ۔

اسد اللہ بھٹونے کہا کہ آج ہم سب کے ساتھ مل کر اعلان کیا ہے کہ ہم ایک ہیں ۔انسان ہونے کی بنیاد پر ہم سب برابر ہیں ۔ہمارا عقیدہ ہے کہ کسی کے مذہب کو چھیڑیں گے نہیں اور اپنے مذہب کو چھوڑیں گے نہیں ۔ جماعت اسلامی گجر نالے کے متاثرین کے ساتھ ہے اور ہمرا مطالبہ ہے کہ اس کی تعمیر و توسیع میں مسلمانوں سمیت جو بھی اقلیتی برادری کی آبادیاں متاثر ہورہی ہیں ان کو متبادل جگہ اور پلاٹ فراہم کیے جائیں ۔ ہم یہ بھی مطالبہ کرتے ہیں کہ سکھ برادری کے لیے کراچی میں گوردوارا تعمیر ہونا چاہیئے ۔

حافظ نعیم الرحمن نےکہا کہ اقلیتوں کے لیے جماعت اسلامی نے واضح طور پر اعلان کیا تھا کہ ہم انہیں اقلیتیں نہیں پاکستانی برادری کہیں گے لیکن بعض مجبوریوں کی وجہ سے اقلیت کہتے ہیں ورنہ ہماری کوشش ہیں کہ ہم سب کے ساتھ عدل و انصاف کویقینی بنایاجائے۔انہوںنے کہاکہ بعض عناصر ملک کو بدنام کرنے کے لیے ملک میں اقلیتی برادری کے ساتھ ناروا سلوک کا شور کرتے ہیں ۔ہم کہتے ہیں کہ اقلیتوں کو ہرگز خوف زدہ ہونے کی ضرورت نہیں ہے کیونکہ اصل میں اسلام کے اندر ہی اقلیتوں کو تمام حقوق اور تحفظ حاصل ہے ۔

آسر مل منگلانی نے کہا کہ جماعت اسلامی کو میں نے قریب سے دیکھا ہے ان کے اندر سادگی اور سچائی ہے ،یہ اچھی جماعت ہے ہم ان کے ساتھ چلنے پر تیار ہیں اور ہمیں امید ہے کہ ملک کی دیگر اقلیتی برادری کی طرح ہندو برادری بھی جماعت اسلامی کا ساتھ دے کر ملک کو ترقی اور خوشحالی کی طرف لے جاسکتے ہیں ۔ہم ہر طرح سے پاکستان کے خیر خواہ ہیں اور پاکستان کی سلامتی کی دعا کرتے ہیں ہم بھارت کے اندر اقلیتوں اور کشمیر میں مسلمانوں کے ساتھ جو سلوک کیا جارہا ہے اس کی مذمت کرتے ہیں ۔

یونس سوہن ایڈوکیٹ نے کہا کہ ہم منارٹی کی طرف سے سانحہ کوئٹہ کی مذمت کرتے ہیں ہم آج کے منارٹی ڈے کو ان کشمیری خواتین کے نام کرتا ہوں جو مقبوضہ کشمیر میں آزادی کے لیے قربانیاں دے رہی ہیں ۔ہم مطالبہ کرتے ہیں کہ بھارت کے اندر اقلیتوں کے ساتھ جو امتیازی سلوک کیا جارہا ہے اور ظلم کیا جارہا ہے اس کے خلاف آواز اٹھائی جائے ۔انہوں نے کہا کہ ہم کوشش کریں گے کہ سکھوں کے گوردوارا قائم کیا جائے ۔

ہیرا سنگھ ایڈوکیٹ نے کہا کہ سکھ مذہب کے اندر وحدانیت کا درس دیا گیا ہے اور ہم صرف ایک رب پر ہی یقین رکھتے ہیں اور پاکستان زندہ آباد نعرہ لگاتے ہیں ۔منارٹی ڈے کا مقصد یہ ہے کہ جو لوگ اقلیت میں ہیں ان کو جمع کیا جائے اور ا ن کے مسائل اور پریشانیاں معلوم کی جائیں اور انہیں حل کیا جائے ۔سراج الحق ایمانداار اور مخلص رہنما ہیں ان کی ذمہ داری ہے کہ ہمارے لیے ہر فورم پر آواز اٹھائیں ۔

پرویز برکت نے کہا کہ آج یہ استقبالیہ جماعت اسلامی کی طرف سے ملک کی اقلیتی برادری سے محبت اور تعلق کا ثبوت ہے ۔جما عت اسلامی موروثی سیاست اور کرپشن سے پاک جماعت ہے ۔

سیموئیل نذیر نے کہا کہ ملک کی ترقی اور خوشحالی میں مسلم عوام کے ساتھ ساتھ اقلیتی برادری نے بھی بہت اہم کردا ر ادا کیا ہے ۔پاکستان کے اند ر بسنے والے اقلیتی عوام پاکستان کی سلامتی اور بقاکی دعا کرتے ہیں۔

Share.

About Author

Leave A Reply